Manto

Armaan Stole - Beige with Black Text

Rs.2,500.00
Each of us has our own desires. The first instance when it hits you is always the hardest - the longing to read every book in a library, acquire knowledge from lost civilizations, or simply find time for our loved ones.

Sometimes our desires begin to fade away within the course of time or they may stay as strong as they were but are never reached. And if you’re lucky, you’re able to fulfill them before they melt away.

Armaan is an ode to Mirza Ghalib and his poem conveys how our desires contribute to our existence as humans.

An Ode To Mirza Ghalib 
ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے
بہت نکلے مرے ارمان لیکن پھر بھی کم نکلے
ڈرے کیوں میرا قاتل کیا رہے گا اس کی گردن پر
وہ خوں جو چشم تر سے عمر بھر یوں دم بدم نکلے
نکلنا خلد سے آدم کا سنتے آئے ہیں لیکن
بہت بے آبرو ہو کر ترے کوچے سے ہم نکلے
بھرم کھل جائے ظالم تیرے قامت کی درازی کا
اگر اس طرۂ پر پیچ و خم کا پیچ و خم نکلے
مگر لکھوائے کوئی اس کو خط تو ہم سے لکھوائے
ہوئی صبح اور گھر سے کان پر رکھ کر قلم نکلے
ہوئی اس دور میں منسوب مجھ سے بادہ آشامی
پھر آیا وہ زمانہ جو جہاں میں جام جم نکلے
ہوئی جن سے توقع خستگی کی داد پانے کی
وہ ہم سے بھی زیادہ خستۂ تیغ ستم نکلے
محبت میں نہیں ہے فرق جینے اور مرنے کا
اسی کو دیکھ کر جیتے ہیں جس کافر پہ دم نکلے
کہاں مے خانہ کا دروازہ غالبؔ اور کہاں واعظ
پر اتنا جانتے ہیں کل وہ جاتا تھا کہ ہم نکلے
مرزا غالب

Material: Polyester Herringbone
Dimensions: 80 Inches x 24 Inches 

Accessories: Haniya Accessories
Care Instructions: 
  • Dry Clean Only
  • Iron on Medium Heat

These Are Selling Out Fast

Recently viewed